Simplifying Train Travel

زنجیر کھینچ کر ٹرین روکنے کے بارے میں چند حقائق جنہیں آپ نہیں جانتے ہیں۔

ٹرین میں سفر کرتے ہوئے آپ نے ہر کوچ میں ہنگامی حالات میں کھینچی جانے والی زنجیر کو ضرور دیکھا ہوگا۔ لیکن ہو سکتا ہے کہ آپ کو اس بارے میں معلومات نہ ہو کہ زنجیر کھینچ کر ٹرین روکنے کے تعلق سے کیا چیزیں کرنی چاہئیں اور کیا چیزیں نہیں کرنی چاہئیں۔ زنجیر کھینچ کر ٹرین روکنے کے تعلق سے تمام باتوں کو سمجھنے کے لئے نیچے پڑھیں-

 جب کوئی زنجیر کھینچتا ہے تو ٹرین کیسے رکتی ہے

Emergency-or-Alarm-chains-in-Train

ہنگامی زنجیریں ٹرین کے بنیادی بریک پائپ سے جڑی ہوتی ہیں۔ یہ بریک پائپ ہوا کا ایک مستقل دباؤ بنائے رکھتا ہے جس سے ٹرین روانی سے چلتی رہتی ہے۔ جب ہنگامی زنجیر کو کھینچا جاتا ہے تو بریک پائپ میں موجود ہوا ایک چھوٹے سے سوراخ سے باہر نکل جاتی ہے۔ ہوا کے دباؤ میں کمی کی وجہ سے ٹرین کی رفتار دھیمی ہو جاتی ہے۔ ہوا کے دباؤ میں اس کمی کو ٹرین کا ڈرائیور فورا محسوس کر لیتا ہے اور ٹرین کو روکنے کی تدبیر کرتا ہے۔ چونکہ ٹرین تنگ پٹریوں پر چلتی ہے اس لئے اس کو اچانک نہیں روکا جا سکتا ہے کیونکہ ایسا کرنے سے عدم توازن پیدا ہوگا جو ٹرین کے پٹری سے اتر جانے کا سبب بن جائے گا۔

آر پی ایف (RPF) کو یہ کیسے پتہ چلتا ہے کہ زنجیر کس نے کھینچی ہے؟

Chain-Pulling-Punishment

ٹرین کے سبھی کوچوں میں ہنگامی فلیش لائٹ لگی ہوتی ہیں اور جیسے ہی ہنگامی زنجیر کو کھینچا جاتا ہے تو یہ فلیش لائٹ آن ہو جاتی ہیں۔ ٹرین کے ڈرائیور کے پاس بھی ایک لائٹ آواز کے ساتھ جھپکنے لگتی ہے جو اس وقت تک جلتی رہتی ہے جب تک کہ گارڈ، اسسٹنٹ ڈرائیور اور آر پی ایف کا عملہ زنجیر کھینچے جانے کی جگہ پر پہنچ کر زنجیر کو دوبارہ اپنے مقام پر فٹ نہ کر دیں۔ جب زنجیر کو دوبارہ اپنے مقام پر فٹ کر دیا جاتا ہے تو ہوا کا دباؤ دھیرے دھیرے معمول پر واپس آ جاتا ہے اور ٹرین روانہ ہونے کے لئے تیار ہو جاتی ہے۔ آر پی ایف کا عملہ اس کوچ کے مسافروں سے پوچھ تاچھ کرتا ہے جس سے پتہ چل جاتا ہے کہ زنجیر کس نے کھینچی ہے۔

زنجیر کھینچنے کی سزا کیا ہے؟

بغیر کسی مناسب وجہ کے زنجیر کھینچ کر ٹرین روکنا انڈین ریلویز ایکٹ کی دفعہ 141 کے تحت ایک قابل سزا جرم ہے۔ اس ایکٹ کے مطابق، اگر کوئی مسافر ٹرین میں موجود ریلوے عملہ اور مسافروں کے درمیان کے تعلق میں بغیر کسی مناسب وجہ کے دخل اندازی کا سبب بنتا ہے تو اس شخص کو مجرم مانا جائے گا۔ مجرم ثابت ہونے پر اس شخص کو ایک سال کی قید یا 1,000 روپئے تک کے جرمانہ کے ساتھ قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

وہ کون سے قابل قبول حالات ہیں جن میں زنجیر کھینچی جا سکتی ہے؟

Acceptable-Cases-for-Chain-Pulling

جن قابل قبول حالات میں زنجیر کھینچ کر ٹرین کو روکا جا سکتا ہے ان میں سے کچھ یہ ہیں: چلتی ہوئی ٹرین سے کسی مسافر کا گر جانا، ٹرین میں آگ لگ جانا، فیملی کے کسی فرد کا اسٹیشن پر چھوٹ جانا، کسی ایسے اسٹیشن پر کسی بزرگ یا معذور شخص کے ساتھ ٹرین میں سوار ہونا جہاں پر ٹرین کے رکنے کا وقت بہت کم ہو، طبی ہنگامی حالات، حفاظتی ہنگامی حالات مثلا ڈکیتی۔

کیا زنجیر کھینچنے سے ٹرین کو کچھ نقصان پہنچ سکتا ہے؟

Accident-due-to-Chain-Pulling

اگر زنجیر اس وقت کھینچی جائے جب ٹرین پوری رفتار سے دوڑ رہی ہو تو ٹرین کے پٹری سے اتر جانے کا بہت زیادہ امکان رہتا ہے۔ اس کے علاوہ، (زنجیر کھینے جانے کی وجہ سے) کسی ٹرین کے اچانک رک جانے کے سبب پریشانیوں کا ایک پورا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے۔ اس سے نہ صرف وہ ٹرین لیٹ ہو جاتی ہے جس میں آپ سفر کر رہے ہیں بلکہ اس لائن پر چل رہی دوسری ٹرینیں بھی لیٹ ہو جاتی ہیں۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *